کالم/مضامین

عنوان: موجودہ معاشرہ اور مذہب اسلام

ٹائٹل: بیدار ھونے تک

عنوان: موجودہ معاشرہ اور مذہب اسلام

دنیا بھر میں موجودہ غیر اسلامی معاشرہ جنمیں یورپ سمیت امریکہ اوردیگر غیر اسلامی ممالک میں فیملی کا کوئی تصور نہیں ہے۔ یوں کہہ لیں کے بہن بھائی ماں باپ اور دادا دادی کی کوئی تمیز نہیں ہے۔۔۔!!جنسی ضرورت کیلئے شادی کی ضرورت محسوس نہیں کی جاتی بلکہ جانوروں کی طرح وہاں رشتے گڈ مڈ ہیں وہاں عورت کی کوئی عزت نہیں ہے کوئی شوہر نہیں ہے جو کہے بیگم آپ گھر پر رہیں میں ہر چیز آپکو گھر لا کے دونگا۔ وہاں کوئی بیٹا نہیں ہے جو کہے ماں آپ گھر سے نہ نکلیں مجھے حکم دیں۔ وہاں کوئی بیٹی نہیں ہے جو کہے ماں آپ تھک گئی ہیں آرام کریں میں کام خود کردونگی۔۔۔۔یورپ امریکہ سمیت دیگر غیر مسلم ممالک میں عورت گھر کے کام خود کرتی ہیں اور روزی کمانے کیلئے دفتروں میں دھکے بھی خود کھاتی ہیں۔کل تک آزادی کے نعرے لگانے والیاں آج سکون کی ایک سانس کو ترس رہی ہیں کوئی مرد انہیں نہیں اپناتانہ انکی ذمہ داری اٹھاتا ہے۔ وہ صرف استعمال کیجاتی ہیں بس اور یہی ہے بس جبکہ دین اسلام اور حضور کائنات نبی آخرالزماں حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم کے صدقے الله سبحان تعالیٰ نے مسلمانوں کو پاک رشتوں کے بندھن اور احترام و عزت سے نوازا ہے ہمیں قرآن الحکیم کے ذریعے صراط المستقیم دیا اور جینے کا ڈھنگ سیکھایا اور ہمیں اشرف المخلوقات کا درجہ عنایت کیا اے مسلمان عورتیں!! آپ کسی ملکہ سے کم نہیں کیونکہ دین کے احکامات کے صدقے آپ باپ کے سایہ میں لاڈوں سےپلتی ہیں ٰ بھائی آپکا محافظ ہوتا ہے ٰ شوہر آپکا زندگی بھر کا ساتھی ہوتا ہے۔آپ کیا سمجھتی ہیں گھر میں بیٹھ کر ہانڈی روٹی کر کے آپ ملازمہ ہیں؟ نہیں نہیں یہ بھول ہے آپکی یہ ہانڈی روٹی کا سامان جو آپکا شوہر لے کر آتا ہے یہ گرمیوں کی دھوپ اور گرم لوُ وجود پگھلنے والے سورج سے لڑ کر لاتے ہیں۔ آپ کو تو مغربی عورتوں سے عبرت حاصل کرنی چاہیئےلیکن آپکو آزادی نسواں کے سنہرے خواب دکھا کر آپکے وقار کو ختم کرنے کی سازش کی جارہی ہے۔ اس سازش کو نہیں سمجھیں گی تو آپ بھی متاعِ کوچہ و بازار بن جائینگی. خدارا خدارا خدارا یورپی کلچر کی محبت کو دل سے نکال دیجئے بصورت صرف پچھتاوا ہی ہاتھ آئیگا اور کچھ نہیں۔۔معزز قارئین!! موجودہ دور کے ہم مسلمان اپنے مذہبی اقدار شعائر تہذیب اور اخلاق سے کوسوں دور ہوتے جارہے ہیں دنیا کے مال متاع اور حرص میں لادینی سوچ کی غلامی اور بہرہ روری کیجانب بہک رہے ہیں جبکہ ترقی ہو یا ایجاد سکون ہو یا آرام عزت ہو یا مرتبہ یہ سب کے سب ہمارے قدموں تلے ہیں لیکن اس کیلئے ہمیں قرآنی احکامات کو اپنی زندگی میں لازم و ملزوم کرنا پڑیگا کیونکہ یہ زمین دین اسلام کے تابع بنائی گئی ہے اور بعد موت ابدی زندگی جنت میں عالیشان دیدی گئی ہے جبکہ ہم کسقدر اوندھے گرے ہوئے ہیں جاہلوں دجالوں کےچنگل میں پھستے جارہے ہیں گر ہم نے خود کو اور اپنی اولادوں کو نہ سنبھالا اور دین محمدی صلی اللہ علیہ وسلم کیجانب قائم و دائم نہ رکھا تو یقیناً پچھتاوا اور عذاب ہمارا مقدر بن جائیگا اور اگر ہم نے آج کے دور فتن اور موجودہ دجالی زمانے میں عقل و شعور اور قرآن و سنت سے راہ لے لی تو ہمارا مقدر بہترین اور عظیم ترین ہوجائیگا الله مجھ سمیت تمام امت محمدی صلی اللہ علیہ وسلم کو دجالی زمانے کے فتنوں سے ہمیشہ محفوظ بنائے رکھے اورخاص طور پر ریاست پاکستان کو حقیقی معنوں میں اسلامی جمہوریہ پاکستان بنا دے

آمین ثما آمین پاکستان زندہ باد پاکستان پائندہ باد۔۔۔۔۔!!

کالمکار: جاوید صدیقی

MKB Creation

Mehr Asif

Chief Editor Contact : +92 300 5441090

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

MKB Creation
Back to top button

I am Watching You