کالم/مضامین

عنوان:کرونا وائرس کی حقیقت اور اجراء

*lٹائٹل: بیدار ھونے تک

عنوان:کرونا وائرس کی حقیقت اور اجراء

دنیا بھر میں کرونا وائرس کو اس صدی کا سب سے بڑا مہلک خطرناک وائرس سمجھا جارہا ہے۔اس وائرس سے ابتک یعنی آج بروز پیر 25 جنوری 2021 دوپہر 3 بجے تک ورلڈ ہیتھ آرگنائزیشن ڈیٹا کے مطابق کرونا وائرس کے کیسس کی تعداد 99,820,385 ہوچکے ہیں جبکہ اموات 2,140,208 اور واپسی صحت کی جانب لوٹے ہیں انکی تعداد 71,818,733 ہے۔ ڈبلیو ایچ او کا کہنا ہے کہ بے احتیاطی سے مزید اموات جاری رہیں گی جبکہ ویکسین آنے کے باوجود اس کا حملہ جاری رہیگا البتہ اموات کی شرح میں فرق آنے کی توقع ہے۔ دنیا بھر کے ماہرین طب نے اس وائرس کو الله کا عذاب قرار دیا ہے اور حیرت و تعجب کا اظہار کیا کہ کرونا وائرس سے مسلم دنیا اس قدر متاثر نہیں ہوئیں کہ جس قدر امکان ظاہر کیا جارہا تھا۔ عرب امارات ہوں یا دیگر اسلامی ممالک خاص کر پاکستان اور بنگلہ دیش۔ بھارت میں اموات کی شرح میں اضافے پر جب تحقیق کی گئی تو ان میں اکثریت ہندؤں اور دیگر غیر مسلموں کی سامنے آئی۔ ورلڈ ہیتھ آرگنائزیشن کی ٹیم نے تسلیم کیا ہے کہ دین محمدی میں جو اصول و ضوابط واضع کیئے ہیں وہ ایک خوشحال تندرست صحتمند انسان اور معاشرے کیلئے ہیں یقینا ان اصولوں کی پابندی ہی نجات امراض ہے۔۔۔۔ معزز قارئین!! بات ابھی یہاں ختم نہیں ہوتی یورپ خاص طور پر اسلام دشمنی میں اس قدر آگے جاچکا ہے کہ اس کی دجالانہ سوچ و فکر اور معاملات کو رب العزت نے انہی کے ہاتھوں خاک میں مٹا دیا وہ یورپ جہاں مسلم خواتین پر عبایہ اسکارف کی پابندی آئینی قانونی قرار دے چکا تھا اب وہی اسے نجات دہندہ سمجھتا ہے حتیٰ کہ بے پردہ خواتین پر جرمانے عائد کردیئے گئے ہیں۔ یہ ہے اسلام کی طاقت اور اسلام کا اعلیٰ مقام۔ آج دنیا دین محمدی صلی اللہ علیہ وسلم کے اصولوں نظام کو پسندیدہ قرار دے رہی ہے۔ کرونا وائرس کی حقیقت بھی یہی ہے کہ الله نے کفار و مشرکین لادینوں کے ذریعے ہی اس وائرس کا اجراء کرایا اور انہی سے اسلامی طرز عمل کو پھیلانے کیلئے مجبور کیا آج دنیا کا کوئی ایسا مقام نہیں جہاں وضو اور غسل کے طرز پر عمل نہ کیا جارہا ہو آج دنیا بھر میں کوئی ایسا مقام نہیں جہاں ماسک کو لازم قرار نہ دیا گیا ہو اور چہرے کو ڈھاپنے کیلئے سختی برتی نہ جاتی ہو۔ حقیقت تو یہ ہے کہ دین محمدی کو الله نے اپنے حبیب محمد مصطفیٰ آخر الزماں صلی اللہ علیہ وسلم کو پسند فرماتے ہوئے اصول فرمائے بیشک الله سے بڑھ کر کوئی نہیں اسی لیئے اپنی شان کے مطابق ہمیں قرآن جیسی عظیم نعمت سے نوازا اور ہیں سب سے اچھا دین عنایت کیا یاد رکھیں کہ ناشکروں کیلئے الله کے ہاں کوئی رعایت نہیں وہ اپنی سرکشی کا خمیادہ بھکتیں گے۔ میرا جسم میری مرضی کہنے والی طوائفیں اب کہاں چھپ گئیں توبہ کریں اور کہیں سب سے بڑا رب وہی قادر مطلق ہے ہم ناچیز کچھ بھی نہیں۔ ہماری پرنٹ میڈیا ہو یا الیکٹرونک میڈیا اور میرے خاندان صحافت کے دوست بھی اس بابت لکھیں اور الیکٹرونک میڈیا پر پروگرام کریں کہ جب دنیا خوفزدہ تھی چیخ و پکار کررہی تھی اس وقت آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کے دین اسلام کام آیا اور اطاعت رسول صلی اللہ علیہ وسلم ہی بہترین حفاظت اور تحفظ کا ضامن بنی۔۔۔ معزز قارئین!! یقین جانئے ہم مسلمانوں کی ترقی و کامرانی ہی نظام مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم میں ہے اور نظام مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم کو رائج کرنے کیلئے متحد ہوکر ریاست پاکستان کو مجبور کریں کہ ہمیں صرف اور صرف نظام مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم چاہئے۔ کرونا وائرس ہو یا اس سے زیادہ خطرناک وائرس سب کے سب کم تر ہیں الله کی قدرت کے سامنے اور الله کی رضا محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم کی رضا میں ہے اور ہمارے آقا و مولا حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی رضا انکی اطاعت میں ہے۔۔۔۔!!

کالمکار: جاوید صدیقی

MKB Creation

Mehr Asif

Chief Editor Contact : +92 300 5441090

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

MKB Creation
Back to top button

I am Watching You