کالم/مضامین

اپنی حیثیت و شان کے مطابق

اپنی حیثیت و شان کے مطابق۔۔

تحریر: جاوید صدیقی جرنلسٹ کراچی

جلال الدین المعروف مولانا روم کی تصانیف کے مطالعہ سے ایک واقعہ اپنے ناظرین کی خدمت میں پیش کررھا ھوں۔ مولانا روم جس انداز سے لوگوں کو مثالوں سے سمجھاتے تھے، وہ بہت آسان اور قصوں پر مشتمل ھوتا تھا۔ جلال الدین مولانا روم کہتے ہیں محمود غزنوی کا دور تھا ایک شخص کی طبیعت ناساز ہوئی تو طبیب کے پاس چلا گیا اور کہا کہ مجھے دوائی بنا کے دے دو طبیب نے کہا کہ دوائی کیلئے جو چیزیں درکار ہیں، سب موجود ہیں سواء شہد کے۔ تم اگر شہد کہیں سے لا دو تو میں دوائی تیار کئے دیتا ہوں اتفاق سے موسم شہد کا نہیں تھا۔ اس شخص نے حکیم سے ایک ڈبا لی اور چلا گیا لوگوں کے دروازے کھٹکھٹانے لگا مگر ہر جگہ مایوسی ہوئی جب مسئلہ حل نہ ہوا تو وہ محمود غزنوی کے دربار میں حاضر ہوا کہتے ہیں وہاں ایاز نے دروازہ کھولا اور دستک دینے والے کی روا داد سنی اس نے وہ چھوٹی سی ڈبیا دی اور کہا کہ مجھے اس میں شہد چاہئے، ایاز نے کہا آپ تشریف رکھئے میں بادشاہ سے پوچھ کے بتاتا ہوں۔ ایاز وہ ڈبیا لے کر بادشاہ کے سامنے حاضر ہوا اور عرض کی کہ بادشاہ سلامت ایک سائل کو شہد کی ضرورت ہے۔ بادشاہ نے وہ ڈبیا لی اور سائڈ میں رکھ دی ایاز کو کہا کہ تین بڑے ڈبے شہد کے اٹھا کے اس کو دے دیئے جائیں۔ ایاز نے کہا حضور اس کو تو تھوڑی سی چاہئے۔ آپ تین ڈبے کیوں دے رہے ہیں۔ بادشاہ نے ایاز سے کہا ایاز وہ مزدور آدمی ہے اس نے اپنی حیثیت کے مطابق مانگا ہے۔ ہم بادشاہ ہیں، ہم اپنی حیثیت کے مطابق دینگے۔ مولانا روم فرماتے ہیں آپ اللہ پاک سے اپنی حیثیت کے مطابق مانگیں وہ اپنی شان کے مطابق عطا کریگا شرط یہ ہے کہ مانگیں تو صحیح ۔۔۔۔۔۔!!

MKB Creation

Mehr Asif

Chief Editor Contact : +92 300 5441090

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

MKB Creation
Back to top button

I am Watching You